294

جعلی اکاؤنٹس کیس ۔۔!! میڈیکل رپورٹ نہ آئی تو نیب افسر جیل جانے کی تیاری لے۔۔۔ اسلام آباد ہائیکورٹ سے بڑا حکم جاری کر دیا گیا

اسلام آباد(ویب ڈیسک)اسلام آباد ہائیکورٹ کا جعلی اکاؤنٹس کیس میں مرکزی ملزم خواجہ انور مجید کی میڈیکل رپورٹ پیش نہ کرنے پر نیب پر شدید اظہاربرہمی، نیب سے میڈیکل رپورٹ طلب کرتے ہوئے کیس کی سماعت 4 مئی تک ملتوی کردی ۔اسلام آباد ہائیکورٹ میں جسٹس عامر فاروق ، جسٹس محسن اخترکیانی پر مشتمل ڈویژنل بینچ نے جعلی اکائونٹس کیس میں مرکزی ملزم خواجہ انور مجید کی درخواست ضمانت پر سماعت کی۔ جسٹس عامر فاروق نے سماعت کے آغاز پر ہی نیب تفتیشی افسر سے استفسار کیا کہ کہاں ہے ملزم کی میڈیکل رپورٹ؟ جس پر نیب کے تفتیشی افسر نے بتایا کہ لاک ڈائون کے باعث فلائٹس بند ہیں اس لیے ممکن نہیں ہو سکا۔ جسٹس عامرفاروق نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ میڈیکل رپورٹ کا نیب کو کہا تھا ، کراچی سے رپورٹ منگوانی ہے یہاں سے تو کسی کو نہیں جانا، رپورٹ آپ کو ڈاکٹر سے لینی ہے ، نیب کوخود تو چیک نہیں کرنا، اب اس میں کیا امر مانع ہے ، کیا تفتیشی افسر کو کوئی سوالنامہ دینا ہے ؟۔ جسٹس عامرفاروق نے اپنے ریمارکس میں مزید کہا کہ یہ 31 مارچ کا حکم ہے اور ابھی تک آپ نے اس پرعمل نہیں کیا ،کیوں نہ آپ کوہی توہین عدالت کا نوٹس دے دیں۔ جسٹس عامرفاروق نے کہا آپ جیلوں کو دیکھ کر تو آئیں وہاں کیا صورتحال ہے ، ویسے بھی گرمی کا موسم ہے جیل میں زیادہ انجوائے کریں گے ۔ عدالت نے نیب تفتیشی افسر سے کہا اگلے ہفتے تک کا ٹائم دے رہے ہیں،آئندہ سماعت پر ٹوتھ برش ساتھ لیکر آئیں ، رپورٹ نہ آئی تو یہیں سے اڈیالہ جیل جائیں گے ۔ وکیل صفائی نے کہا احتساب کورٹ کیلئے میڈیکل رپورٹ منگوا لی گئی یہاں کیلئے نہیں منگوائی گئی،رپورٹ میں لکھا ہے کہ خواجہ انور کی طبیعت انتہائی ناساز ہے ،ملزم جس ہسپتال میں ہے وہاں کے 3 ڈاکٹر کورونا کا شکار ہو چکے ہیں،عمر کے اس حصہ میں خواجہ انور مجید کو کورونا وائرس کازیادہ خطرہ ہے ، عدالت نے نیب سے میڈیکل رپورٹ طلب کرتے ہوئے کیس کی سماعت 4 مئی تک ملتوی کردی۔

Source : HassanNissar

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں