88

تاجروں کے بعد پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن کا بھی تحریک چلانے کا اعلان

حیدرآباد(این این آئی) پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن نے سندھ حکومت کی طرف سے ہیلتھ الاؤنس ختم کرنے سمیت اپنے دیگر مطالبات کے سلسلے میں تحریک چلانے کا اعلان کردیا، پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن سندھ کے صدر ڈاکٹر عثمان، جنرل سیکریٹری ڈاکٹر رفیق الحسن کھوکھر، ڈاکٹر آغا تاج محمد، ڈاکٹر محمدز مان بلوچ ودیگر نے حیدرآباد پریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہاکہ حکومت سندھ نے کورونا وباء نے کے دوران جولائی 2020ء میں محکمہ صحت میں ڈاکٹرز سمیت دیگر عملے کے لئے رسک الاؤنس جاری کیا جس کو یکم اکتوبر کو ختم کرنے کا نوٹیفیکیشن جاری کرکے رسک الاؤنس بند کردیا گیا ہے،

انہوں نے کہاکہ سندھ حکومت روزانہ خود کورونا سے فوت ہونے والے، زیر علاج مریضوں کی فہرست جاری رہی ہے اور ایسے میں ڈاکٹرز ودیگر عملہ اپنی جان خطرے میں ڈال کر کام کرہا ہے لیکن حکومت سندھ نے رسک الاؤنس بند کردیا، انہوں نے وزیر اعلیٰ سندھ، صوبائی وزیر صحت سے مطالبہ کیا کہ ڈاکٹرز کے ہاؤس رینٹ، ہیلتھ پروفیشنل الاؤنس، پوسٹ گریجویٹس اور ہاؤس آفیسر کے وظیفے،

کورونا وارڈ ز کام کرنے والے کچے ملازمین کو پکا کرے اور فوتی وریٹائرڈ فارمولے کے تحت ڈاکٹرز اور نرسز کے مطالبات پورے کرے، رسک الاؤنس جاری کیاجائے، اگر ایک ہفتے میں مطالبات تسلیم نہ ہوئے تو احتجاجی تحریک شروع کی جائے گی۔

Source : Javedch

کیٹاگری میں : صحت

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں