314

کیاآپ کومعلوم ہے کہ پاکستان اورترکی کے قومی پرچم کہاں سے نقل کیے گئے

عہد نبوی کے دوران مسلمانوں کے اندرجوانقلاب برپاہوااس نے نہ صرف مسلمانوں کوقابل فخر بنادیابلکہ ان کے ذریعے اسلام کی تاریخ کوبھی عظیم کردیا۔دور رسالت کے بعد دین اسلام کے پرچم کی حفاظت کاذمہ آپ ؐ کے سچے جانشینوں کے سپردہوا۔اوران سچے جانشینوں (صحابہ کرام )نے اس پرچم کی حفاظت اوردین اسلام کی سربلندی کے لیے ایساکارنامہ سرانجام دیاکہ عقل انسانی دنگ رہ گئی۔پھراس کے بعد اموی خاندان نے ایک صدی تک مسلم ممالک کی
فتوحات کاسلسلہ بام عروج تک پہنچاکرمعیشت کایہ حال کیاکہ صاحب نصاب کوکوئی غریب نہیں ملتاتھاکہ وہ زکواۃ اداکرلےیہ مسلمانوں کاسب سے آئیڈل دورکہلایاجاتاہے۔تیسرامثالی دوربنوعباس کاگزارا۔پھرعربوں کے بعد عجمیوں کادورآیااسلام کی نشاط ثانیہ یعنی خلافت عثمانیہ کاقیام عمل میں آیا۔جومسلمانوں کےعروج کاآخری دورتھا۔کہاجاتاہے کہ یورپ ،افریقہ اورایشیاپرمحیط تین براعظموں پرخلافت کاقیام تھاجس نے پوری دنیامیں اسلام کے پرچم کوعروج بخشااورایک مثالی حکومت قائم کی اوریہی وہ دورتھاجس کے بارے میں مسندامام احمدکی ایک حدیث شریف میں آتاہےکہ پیغمبردوعالم حضرت محمد ؐ نے فرمایاکہ تم مسلمان ضرور قسطنطنیہ فتح کرلوگےپس بہترامیر اس کاامیرہوگااوروہ بہترین لشکرہوگا۔یہی وہ حدیث مبارکہ ہے جس پرسلطان محمد فاتح ذریعے عمل ہوالیکن اس خلافت کوزوال ہونے کے بعدترکی سمٹ کررہ گیا۔گوگل کے ذریعے خلاف عثمانیہ کے پرچم پرغور کریں توایک حیرت انگیز حقیقت کاانکشاف ہوتاہےجس میں پاکستان اورترکی کےجھنڈوں کی ایک جھلک نظر آتی ہےیعنی اس بات سے بخوبی اندازہ لگایاجاسکتاہےکہ خلافت ٹوٹنے کے بعد ایک جھنڈاترکی نے اپنایااورایک پاکستان کابناجس کامطلب ہے کہ اللہ تعالیٰ نے پہلے خلافت ترکوں کودی تھی اورترکوں کے ذریعے صدیوں تک اسلام کابول بالاکروایالیکن اس دفعہ یہ خلافت پاکستان کوعطا کی جانیوالی ہے۔یعنی اب وہ دورآنیوالاہے کہ پاکستان بھی ترکی کی طرح اسلام کی سربلندی کے لیےاہم کام سرانجام دے گا۔پاکستان آج ٹیکنالوجی اوراسلحہ کے معاملے میں ترکی سے آگے ہیں اورہم پاکستان غیرعرب ہونےکے باعث یہ اعزاز بھی رکھتے ہیں کہ ایک مرتبہ آپ ؐ نے فرمایاجس کامفہوم ہے کہ آخری زمانے میں اللہ تعالیٰ غیرعرب میں سےا یک قوم اٹھائے گاجوہتھیاروں میں عربوں سے بھی طاقتورہوں گے اللہ ان سے اپنے دین کی تکمیل کروائے گا۔

Credit : dailyausaf

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں