267

بریکنگ نیوز: بھڑکیں مارنےوالے بھڑکیں ہی مارتے رہ گئے۔۔۔ چین نے بھارت کے38 ہزار مربع کلومیٹر علاقے پر قبضہ کر لیا ، مودی کی بھارت کا وجود خطرے میں نظر آنے لگا

نئی دہلی (ویب ڈیسک) بھارت نے الزام عائد کیا ہے کہ چین نے مغربی ہمالیہ میں ہمارے 38 ہزار مربع کلومیٹر علاقے پر قبضہ کر رکھا ہے۔ دونوں ممالک کے حکام کے درمیان حالیہ سرحدی کشیدگی میں کمی کیلئے مذاکرات کا انعقاد، گزشتہ ماہ بھارتی فوج کے جارحانہ عزائم کو ناکام بنانے کیلئے چینی فوج بھارتی حدود میں

داخل ہوگئی تھی۔تفصیلات کے مطابق بھارت اور چین کے درمیان گزشتہ ماہ سے جاری سرحدی تنازعے کے حوالے سے بھارتی میڈیا کا دعویٰ ہے کہ معاملات مذاکرات کے ذریعے حل کر لیے گئے ہیں۔ تاہم اس حوالے سے چین کی جانب سے تاحال کوئی باقاعدہ اعلان نہیں کیا گیا۔ اس تنازعے کے حوالے سے قومی اخبار میں شائع ایک رپورٹ کے مطابق چین کا موقف ہے کہ بھارت کے شمال مشرقی علاقے میں 90 ہزار مربع کلومیٹر کا علاقہ اس کی ملکیت ہے۔جبکہ بھارت الزام عائد کرتا ہے کہ چین مغربی ہمالیہ میں اس کے 38 ہزار مربع کلومیٹر علاقے پر قبضہ کر چکا ہے۔ اس سرحدی تنازعے کی وجہ سے ہی دونوں ممالک کے درمیان کئی مرتبہ سرحدی علاقوں میں کشیدگی پیدا ہوئی۔ حال ہی میں کشیدگی میں دوبارہ اضافہ دیکھنے میں آیا۔ چین اور بھارت کی فوج لداخ میں ایک دوسرے کے مدمقابل ہیں۔ بھارت نے الزام عائد کیا تھا کہ سینکڑوں چینی فوجی 3 ہزار 500 کلو میٹر لمبی سرحد کے ساتھ متنازع زون میں داخل ہوگئے ہیں۔دونوں ممالک کی افواج لداخ کی وادی گالوان میں خیمہ زن ہوئے تھے اور ایک دوسرے پر متنازع سرحد پار کرنے کا الزام عائد کیا تھا۔ چین کی جانب سے تقریباً 80 سے 100 ٹینٹ نصب کردیے گئے ہیں جبکہ بھارت کی جانب سے بھی 60 خیمے لگائے گئے ہیں۔ بتایا گیا کہ سرحد پر تنازع کی اصل وجہ بھارت کی جانب سے سڑکوں اور رن ویز کی تعمیر ہے۔

Source : HassanNissar

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں