263

بالاخر مسلمان ماہرین ہی کام آئے۔۔!! ڈونلڈ ٹرمپ نے مراکشی نژاد مسلمان امریکی ڈاکٹر کے حوالے سے کیا فیصلہ کر لیا؟ اُمتِ مسلمہ کے لیے بڑی خبر

واشنگٹن (ویب ڈیسک) مسلمان طبی ماہر امریکا میں کرونا کی ویکسین تیار کرے گا،امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے مسلمان طبی ماہر کو کرونا وائرس کی ویکسین کی تلاش کے لیے فاسٹ ٹریک پروگرام کا سربراہ نامزد کردیا ہے ۔ڈونلڈ ٹرمپ نے بریفنگ کے دوران کہا کہ ڈاکٹر منصف محمد ویکسین کی تلاش کے لیے آپریشن ریپ wrap اسپیڈ پروگرام کے چیف سائنٹسٹ ہوں گے۔ ٹرمپ نے بتایا کہ ڈاکٹر منصف دنیا کے مشہور امیونو لوجسٹ ہیں جو چودہ نئی ویکسینز کی تیاری میں خدمات انجام دے چکے ہیں۔مراکشی نژاد امریکی ڈاکٹر منصف محمد کا کہنا تھا کہ انہوں نے کرونا وائرس ویکسین کے کلینیکل ٹرائل کا ابتدائی ڈیٹا دیکھا ہے۔ انہیں امید ہے کہ اس ڈیٹا کی بنیاد پر وہ سال کے آخر تک ویکسین کی لاکھوں خوراک تیار کرلیں گے۔امریکا میں کرونا وائرس سے 90113 اموات ہوچکی ہیں جبکہ متاثرین کی تعداد1,507,798 ہے۔دوسری جانب ایک خبر کے مطابق پاکستان میں کورونا وائرس کی ویکسین کا ٹرائل جلد شروع ہوجائے گا، آکسفورڈ یونیورسٹی نے ویکسین تیار کی ہے، ہم ویکسین ان کے ساتھ ویکسین کی تیاری نہیں کرسکے، لیکن اب ان کے ساتھ ٹرائل کا حصہ بنیں گے۔انہوں نے نجی ٹی وی کے پروگرام میں تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ہمارا آکسفورڈ کے ساتھ پہلے ہی اشتراک چل رہا ہے، آکسفورڈ یونیورسٹی میں ہم نے یونیورسٹی ہیلتھ سائنسز کی چیئرقائم ہوئی ہے۔ہم ویکسین کی تیاری میں تو ان کے ساتھ کام نہیں کررہے، کیونکہ آکسفورڈ یونیورسٹی کی ایک ویکسین تیار ہوچکی ہے، اس لیے ہم ویکسین کی تیاری میں نہیں اب ہم ویکسین کے ٹرائل میں ان کا حصہ بننے جا رہے ہیں ۔ہم ان کے ساتھ معاہدہ کرنے جا رہے ہیں۔ ہم نے چین کے ساتھ بھی ہماری بات چیت چل رہی ہے، کہ ان کی ویکسین کا ٹرائل ہم اپنی آبادی میں فیز ون سے کریں گے، جو کہ ہم آسانی سے کرسکتے ہیں۔ان ویکسین کی پاکستان میں مریضوں پر آزمائش سے ہمیں پتا چل جائے گا کہ پاکستان میں کس قدر مئوثر ہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان میں کورونا وائرس کی ویکسین کا ٹرائل جلد شروع ہوجائے گا۔ویکسین کے ٹرائل کیلئے مختلف یونیورسٹیوں سے رابطے میں ہیں۔ مزید برآں ڈاکٹر جاوید اکرم کا کہنا ہے کہ حکومت نے نام نہاد لاک ڈاؤن میں جو نرمی کی ہے، اس کے نتائج 15دن بعد آئیں گے۔وائرس پھیلنے کا سائیکل ایک شخص سے دوسرے شخص میں منتقلی کے دس سے پندرہ دن ہیں۔اس لیے 30 فیصد ایسے لوگ شامل ہوجائیں گے جو وائرس کا شکار ہوں گے ان میں علامات نہیں ہوں گی، لیکن وہ سات سے دس لوگوں میں بیماری ٹرانسفر کرتے پھیریں گے۔فی بندہ ایک ہفتے میں 70لوگوں کو متاثر کردے گا۔ ہمیں اس کی بڑی قیمت ادا کرنا پڑے گی، 68 فیصد آبادی متاثر ہوگی، پاکستان دنیا کا تیسرا بڑا ملک بننے جا رہا ہے۔ جب 68 فیصد آبادی متاثر ہوجائے گی تو شرح اموات بھی 12فیصد ہوجائے گی۔

Source : HassanNissar

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں